صحيح مسلم کل احادیث 3033 :ترقیم فواد عبدالباقی
صحيح مسلم کل احادیث 7563 :حدیث نمبر
صحيح مسلم
جنازے کے احکام و مسائل
25. باب نَسْخِ الْقِيَامِ لِلْجَنَازَةِ:
25. باب: جنازہ کے لئے کھڑا ہونا منسوخ ہے۔
حدیث نمبر: 2231
پی ڈی ایف بنائیں اعراب
Warning: Undefined variable $mhadith_hindi_status in /home4/islamicurdub/public_html/hadith/display-hadith-number.php on line 36

Warning: Undefined variable $vhadith_type2 in /home4/islamicurdub/public_html/hadith/display-arabic.php on line 20

Warning: Undefined variable $vhadith_type2 in /home4/islamicurdub/public_html/hadith/display-arabic.php on line 20

Warning: Undefined variable $vhadith_type2 in /home4/islamicurdub/public_html/hadith/display-arabic.php on line 20
وحدثناه محمد بن ابي بكر المقدمي ، وعبيد الله بن سعيد ، قالا: حدثنا يحيى وهو القطان ، عن شعبة بهذا الإسناد.

Warning: Undefined variable $vhadith_type2 in /home4/islamicurdub/public_html/hadith/display-arabic.php on line 39

Warning: Undefined variable $vhadith_type2 in /home4/islamicurdub/public_html/hadith/display-arabic.php on line 39

Warning: Undefined variable $vhadith_type2 in /home4/islamicurdub/public_html/hadith/display-arabic.php on line 39
وحَدَّثَنَاه مُحَمَّدُ بْنُ أَبِي بَكْرٍ الْمُقَدَّمِيُّ ، وَعُبَيْدُ اللَّهِ بْنُ سَعِيدٍ ، قَالَا: حَدَّثَنَا يَحْيَى وَهُوَ الْقَطَّانُ ، عَنْ شُعْبَةَ بِهَذَا الْإِسْنَادِ.
یحییٰ قطان نے شعبہ سے اسی سند کے ساتھ (یہی) حدیث بیان کی۔
امام صاحب نے دوسرے دو اساتذہ سے بھی یہی روایت نقل کی ہے۔
ترقیم فوادعبدالباقی: 962

تخریج الحدیث کے تحت حدیث کے فوائد و مسائل
  الشيخ الحديث مولانا عبدالعزيز علوي حفظ الله، فوائد و مسائل، تحت الحديث ، صحيح مسلم: 2231  
1
حدیث حاشیہ:
فوائد ومسائل:
حضرت علی رضی اللہ تعالیٰ عنہ کی روایت کے بارے میں یہ اختلاف ہے کہ اس کا معنی کیا ہے امام بیضاوی رحمۃ اللہ علیہ کہتے ہیں کہ اس کا یہ معنی بھی ہو سکتا ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم جنازہ دیکھ کر اٹھ کھڑے ہوتے جب گزر جاتا یا نظروں سے اوجھل ہو جاتا تو بیٹھ جاتے جیسا کہ مذکورہ بالا باب کی روایات میں یہ تصریح موجود ہے۔
اور امام ملاعلی قاری کا خیال ہے کہ اس حدیث کا تعلق قبرستان میں یا قبر میں جنازہ رکھنے سے ہے کہ قبرستان میں جنازہ رکھنے سے پہلے بیٹھنا صحیح ہے۔
آپ صلی اللہ علیہ وسلم پہلے نہیں بیٹھتے تھے بعد میں بیٹھنے لگ گئے اور بعض کا خیال ہے کہ اس حدیث کا تعلق مطلقاً قیام سے ہے۔
اس لیے اس کے بارے میں صحابہ کرام رضوان اللہ عنھم اجمعین وتابعین رحمۃ اللہ علیہ اور ائمہ میں اختلاف ہے بعض کا خیال ہے کہ یہ استحبابی حکم ہے کھڑا ہونا اور رکھے جانے تک کھڑے رہنا بہتر ہے اور یہی قول مناسب معلوم ہوتا ہے کہ کھڑے ہونا بہتر ہے اور بیٹھنا جائز ہے۔
امام احمد رحمۃ اللہ علیہ امام اسحاق رحمۃ اللہ علیہ کے نزدیک اختیار ہے کوئی پابندی نہیں ہے جیسا چاہے کر لے اور حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ۔
ابن عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہما،
ابن زبیر رضی اللہ تعالیٰ عنہ،
ابوسعید خدری رضی اللہ تعالیٰ عنہ،
ابوموسیٰ اشعری رضی اللہ تعالیٰ عنہ،
حسن بن علی رضی اللہ تعالیٰ عنہ،
امام اوزاعی رحمۃ اللہ علیہ،
احمد رحمۃ اللہ علیہ۔
اسحاق محمد بن حسن رحمۃ اللہ علیہ کا مؤقف یہی ہے کہ جب تک قبرستان میں جنازہ رکھ نہ دیا جائے اس وقت تک بیٹھنا درست نہیں ہے لیکن ابوحنیفہ رحمۃ اللہ علیہ۔
مالک رحمۃ اللہ علیہ۔
شافعی رحمۃ اللہ علیہ اور بعض صحابہ رضوان اللہ عنھم اجمعین وتابعین رحمۃ اللہ علیہ کی رائے میں جنازہ اٹھنا اور قبرستان میں رکھنے تک کھڑے رہنا منسوخ ہے۔
   تحفۃ المسلم شرح صحیح مسلم، حدیث\صفحہ نمبر: 2231   


http://islamicurdubooks.com/ 2005-2023 islamicurdubooks@gmail.com No Copyright Notice.
Please feel free to download and use them as you would like.
Acknowledgement / a link to www.islamicurdubooks.com will be appreciated.