قرآن مجيد

سورۃ المدثر
اپنا مطلوبہ لفظ تلاش کیجئیے۔

[ترجمہ محمد جوناگڑھی][ترجمہ فتح محمد جالندھری][ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
نمبر آيات تفسیر

--
بِسْمِ اللَّـهِ الرَّحْمَـنِ الرَّحِيمِ﴿﴾
شروع کرتا ہوں اللہ تعالٰی کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم کرنے والا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

1
يَا أَيُّهَا الْمُدَّثِّرُ (1)
يا أيها المدثر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اے کپڑا اوڑھنے والے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اے (محمدﷺ) جو کپڑا لپیٹے پڑے ہو۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اے کمبل میں لپٹنے والے!
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
تفسیر آیت نمبر 1,2,3,4,5,6,7,8,9,10

2
قُمْ فَأَنْذِرْ (2)
قم فأنذر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
کھڑا ہوجا اور آگاه کردے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اُٹھو اور ہدایت کرو۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اٹھ کھڑا ہو، پس ڈرا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

3
وَرَبَّكَ فَكَبِّرْ (3)
وربك فكبر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اور اپنے رب ہی کی بڑائیاں بیان کر۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور اپنے پروردگار کی بڑائی کرو۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور اپنے رب ہی کی پس بڑائی بیان کر۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

4
وَثِيَابَكَ فَطَهِّرْ (4)
وثيابك فطهر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اپنے کپڑوں کو پاک رکھا کر۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور اپنے کپڑوں کو پاک رکھو۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور اپنے کپڑے پس پاک رکھ۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

5
وَالرُّجْزَ فَاهْجُرْ (5)
والرجز فاهجر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
ناپاکی کو چھوڑ دے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور ناپاکی سے دور رہو۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور پلیدگی کوپس چھوڑ دے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

6
وَلَا تَمْنُنْ تَسْتَكْثِرُ (6)
ولا تمنن تستكثر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اور احسان کرکے زیاده لینے کی خواہش نہ کر۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور (اس نیت سے) احسان نہ کرو کہ اس سے زیادہ کے طالب ہو۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور( اس نیت سے) احسان نہ کر کہ زیادہ حاصل کرے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

7
وَلِرَبِّكَ فَاصْبِرْ (7)
ولربك فاصبر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اور اپنے رب کی راه میں صبر کر۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور اپنے پروردگار کے لئے صبر کرو۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور اپنے رب ہی کے لیے پس صبر کر۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

8
فَإِذَا نُقِرَ فِي النَّاقُورِ (8)
فإذا نقر في الناقور۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
پس جب کہ صور میں پھونک ماری جائے گی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
جب صور پھونکا جائے گا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
سو جب صور میں پھونکا جائے گا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

9
فَذَلِكَ يَوْمَئِذٍ يَوْمٌ عَسِيرٌ (9)
فذلك يومئذ يوم عسير۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
تو وه دن بڑا سخت دن ہوگا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
وہ دن کا مشکل دن ہوگا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
تو وہ اس دن، ایک مشکل دن ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

10
عَلَى الْكَافِرِينَ غَيْرُ يَسِيرٍ (10)
على الكافرين غير يسير۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
جو کافروں پر آسان نہ ہوگا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
(یعنی) کافروں پر آسان نہ ہوگا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
کافروں پر آسان نہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

11
ذَرْنِي وَمَنْ خَلَقْتُ وَحِيدًا (11)
ذرني ومن خلقت وحيدا۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
مجھے اور اسے چھوڑ دے جسے میں نے اکیلا پیدا کیا ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
ہمیں اس شخص سے سمجھ لینے دو جس کو ہم نے اکیلا پیدا کیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
چھوڑ مجھے اور اس شخص کو جسے میں نے اکیلا پیدا کیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
تفسیر آیت نمبر 11,12,13,14,15

12
وَجَعَلْتُ لَهُ مَالًا مَمْدُودًا (12)
وجعلت له مالا ممدودا۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اور اسے بہت سا مال دے رکھا ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور مال کثیر دیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور میں نے اسے لمبا چوڑا مال عطا کیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

13
وَبَنِينَ شُهُودًا (13)
وبنين شهودا۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اور حاضر باش فرزند بھی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور (ہر وقت اس کے پاس) حاضر رہنے والے بیٹے دیئے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور حاضر رہنے والے بیٹے (عطا کیے)۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

14
وَمَهَّدْتُ لَهُ تَمْهِيدًا (14)
ومهدت له تمهيدا۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اور میں نے اسے بہت کچھ کشادگی دے رکھی ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور ہر طرح کے سامان میں وسعت دی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور میں نے اس کے لیے سامان تیار کیا، ہر طرح تیار کرنا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

15
ثُمَّ يَطْمَعُ أَنْ أَزِيدَ (15)
ثم يطمع أن أزيد۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
پھر بھی اس کی چاہت ہے کہ میں اسے اور زیاده دوں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
ابھی خواہش رکھتا ہے کہ اور زیادہ دیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
پھر وہ طمع رکھتا ہے کہ میں اسے اور زیادہ دوں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

16
كَلَّا إِنَّهُ كَانَ لِآيَاتِنَا عَنِيدًا (16)
كلا إنه كان لآياتنا عنيدا۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
نہیں نہیں، وه ہماری آیتوں کا مخالف ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
ایسا ہرگز نہیں ہوگا۔ یہ ہماری آیتیں کا دشمن رہا ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
ہرگز نہیں! یقینا وہ ہماری آیات کا سخت مخالف رہا ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
تفسیر آیت نمبر 16,17,18,19,20,21,22,23,24,25,26,27,28,29,30

17
سَأُرْهِقُهُ صَعُودًا (17)
سأرهقه صعودا۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
عنقریب میں اسے ایک سخت چڑھائی چڑھاؤں گا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
ہم اسے صعود پر چڑھائیں گے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
عنقریب میں اسے ایک دشوار گھاٹی چڑھنے کی تکلیف دوں گا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

18
إِنَّهُ فَكَّرَ وَقَدَّرَ (18)
إنه فكر وقدر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اس نے غور کرکے تجویز کی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اس نے فکر کیا اور تجویز کی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
بے شک اس نے غور و فکر کیا اور بات بنائی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

19
فَقُتِلَ كَيْفَ قَدَّرَ (19)
فقتل كيف قدر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اسے ہلاکت ہو کیسی (تجویز) سوچی؟۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
یہ مارا جائے اس نے کیسی تجویز کی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
پس وہ مارا جائے، اس نے کیسی بات بنائی!
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

20
ثُمَّ قُتِلَ كَيْفَ قَدَّرَ (20)
ثم قتل كيف قدر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
وه پھر غارت ہو کس طرح اندازه کیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
پھر یہ مارا جائے اس نے کیسی تجویز کی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
پھر مارا جائے، اس نے کیسی بات بنائی!
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

21
ثُمَّ نَظَرَ (21)
ثم نظر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اس نے پھر دیکھا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
پھر تامل کیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
پھر اس نے دیکھا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

22
ثُمَّ عَبَسَ وَبَسَرَ (22)
ثم عبس وبسر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
پھر تیوری چڑھائی اور منھ بنایا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
پھر تیوری چڑھائی اور منہ بگاڑ لیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
پھر اس نے تیوری چڑھائی اور برا منہ بنایا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

23
ثُمَّ أَدْبَرَ وَاسْتَكْبَرَ (23)
ثم أدبر واستكبر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
پھر پیچھے ہٹ گیا اور غرور کیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
پھر پشت پھیر کر چلا اور (قبول حق سے) غرور کیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
پھر اس نے پیٹھ پھیری اور تکبر کیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

24
فَقَالَ إِنْ هَذَا إِلَّا سِحْرٌ يُؤْثَرُ (24)
فقال إن هذا إلا سحر يؤثر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اور کہنے لگا تو یہ صرف جادو ہے جو نقل کیا جاتا ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
پھر کہنے لگا کہ یہ تو جادو ہے جو (اگلوں سے) منتقل ہوتا آیا ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
پھر اس نے کہا یہ جادو کے سوا کچھ نہیں، جو نقل کیا جاتا ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

25
إِنْ هَذَا إِلَّا قَوْلُ الْبَشَرِ (25)
إن هذا إلا قول البشر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
سوائے انسانی کلام کے کچھ بھی نہیں ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
(پھر بولا) یہ (خدا کا کلام نہیں بلکہ) بشر کا کلام ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
یہ انسان کے قول کے سوا کچھ نہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

26
سَأُصْلِيهِ سَقَرَ (26)
سأصليه سقر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
میں عنقریب اسے دوزخ میں ڈالوں گا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
ہم عنقریب اس کو سقر میں داخل کریں گے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
میں اسے جلد ہی سقر (جہنم) میں داخل کروں گا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

27
وَمَا أَدْرَاكَ مَا سَقَرُ (27)
وما أدراك ما سقر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اور تجھے کیا خبر کہ دوزخ کیا چیز ہے؟۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور تم کیا سمجھے کہ سقر کیا ہے؟۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور تجھے کس چیز نے معلوم کروایا کہ سقر (جہنم) کیا ہے؟
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

28
لَا تُبْقِي وَلَا تَذَرُ (28)
لا تبقي ولا تذر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
نہ وه باقی رکھتی ہے نہ چھوڑتی ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
(وہ آگ ہے کہ) نہ باقی رکھے گی اور نہ چھوڑے گی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
وہ نہ باقی رکھتی ہے اور نہ چھوڑتی ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

29
لَوَّاحَةٌ لِلْبَشَرِ (29)
لواحة للبشر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
کھال کو جھلسا دیتی ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور بدن جھلس کر سیاہ کردے گی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
چمڑے کو جھلس دینے والی ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

30
عَلَيْهَا تِسْعَةَ عَشَرَ (30)
عليها تسعة عشر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اور اس میں انیس (فرشتے مقرر) ہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اس پر اُنیس داروغہ ہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اس پر انیس (مقرر) ہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

31
وَمَا جَعَلْنَا أَصْحَابَ النَّارِ إِلَّا مَلَائِكَةً وَمَا جَعَلْنَا عِدَّتَهُمْ إِلَّا فِتْنَةً لِلَّذِينَ كَفَرُوا لِيَسْتَيْقِنَ الَّذِينَ أُوتُوا الْكِتَابَ وَيَزْدَادَ الَّذِينَ آمَنُوا إِيمَانًا وَلَا يَرْتَابَ الَّذِينَ أُوتُوا الْكِتَابَ وَالْمُؤْمِنُونَ وَلِيَقُولَ الَّذِينَ فِي قُلُوبِهِمْ مَرَضٌ وَالْكَافِرُونَ مَاذَا أَرَادَ اللَّهُ بِهَذَا مَثَلًا كَذَلِكَ يُضِلُّ اللَّهُ مَنْ يَشَاءُ وَيَهْدِي مَنْ يَشَاءُ وَمَا يَعْلَمُ جُنُودَ رَبِّكَ إِلَّا هُوَ وَمَا هِيَ إِلَّا ذِكْرَى لِلْبَشَرِ (31)
وما جعلنا أصحاب النار إلا ملائكة وما جعلنا عدتهم إلا فتنة للذين كفروا ليستيقن الذين أوتوا الكتاب ويزداد الذين آمنوا إيمانا ولا يرتاب الذين أوتوا الكتاب والمؤمنون وليقول الذين في قلوبهم مرض والكافرون ماذا أراد الله بهذا مثلا كذلك يضل الله من يشاء ويهدي من يشاء وما يعلم جنود ربك إلا هو وما هي إلا ذكرى للبشر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
ہم نے دوزخ کے داروغے صرف فرشتے رکھے ہیں۔ اور ہم نے ان کی تعداد صرف کافروں کی آزمائش کے لیے مقرر کی ہے تاکہ اہل کتاب یقین کرلیں، اوراہل ایمان کے ایمان میں اضافہ ہو جائے اور اہل کتاب اور اہل ایمان شک نہ کریں اور جن کے دلوں میں بیماری ہے وه اور کافر کہیں کہ اس بیان سے اللہ تعالیٰ کی کیا مراد ہے؟ اسی طرح اللہ تعالیٰ جسے چاہتا ہے گمراه کرتا ہے اور جسے چاہتا ہے ہدایت دیتا ہے۔ تیرے رب کے لشکروں کو اس کے سوا کوئی نہیں جانتا، یہ تو کل بنی آدم کے لیے سراسر پند ونصیحت ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور ہم نے دوزخ کے داروغہ فرشتے بنائے ہیں۔ اور ان کا شمار کافروں کی آزمائش کے لئے مقرر کیا ہے (اور) اس لئے کہ اہل کتاب یقین کریں اور مومنوں کا ایمان اور زیادہ ہو اور اہل کتاب اور مومن شک نہ لائیں۔ اور اس لئے کہ جن لوگوں کے دلوں میں (نفاق کا) مرض ہے اور (جو) کافر (ہیں) کہیں کہ اس مثال (کے بیان کرنے) سے خدا کا مقصد کیا ہے؟ اسی طرح خدا جس کو چاہتا ہے گمراہ کرتا ہے اور جس کو چاہتا ہے ہدایت کرتا ہے اور تمہارے پروردگار کے لشکروں کو اس کے سوا کوئی نہیں جانتا۔ اور یہ تو بنی آدم کے لئے نصیحت ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور ہم نے جہنم کے محافظ فرشتوں کے سوا نہیں بنائے اور ان کی تعداد ان لوگوں کی آزمائش ہی کے لیے بنائی ہے جنھوں نے کفر کیا، تاکہ وہ لوگ جنھیں کتاب دی گئی ہے، اچھی طرح یقین کر لیں اور وہ لوگ جو ایمان لائے ہیں ایمان میں زیادہ ہو جائیں اور وہ لوگ جنھیں کتاب دی گئی ہے اور ایمان والے شک نہ کریں اور تاکہ وہ لوگ جن کے دلوں میں بیماری ہے اور جو کفر کرنے والے ہیں کہیں اللہ نے اس کے ساتھ مثال دینے سے کیا ارادہ کیا ہے؟ اسی طرح اللہ گمراہ کرتا ہے جسے چاہتا ہے اور ہدایت دیتا ہے جسے چاہتا ہے اور تیرے رب کے لشکروں کو اس کے سوا کوئی نہیں جانتا اور یہ باتیں بشر کی نصیحت ہی کے لیے ہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
تفسیر آیت نمبر 31,32,33,34,35,36,37

32
كَلَّا وَالْقَمَرِ (32)
كلا والقمر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
سچ کہتا ہوں قسم ہے چاند کی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
ہاں ہاں (ہمیں) چاند کی قسم۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
ہرگز نہیں، چاند کی قسم!
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

33
وَاللَّيْلِ إِذْ أَدْبَرَ (33)
والليل إذ أدبر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اور رات کی جب وه پیچھے ہٹے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور رات کی جب پیٹھ پھیرنے لگے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور رات کی، جب وہ جانے لگے!
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

34
وَالصُّبْحِ إِذَا أَسْفَرَ (34)
والصبح إذا أسفر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اور صبح کی جب کہ روشن ہو جائے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور صبح کی جب روشن ہو۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور صبح کی، جب وہ روشن ہو!
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

35
إِنَّهَا لَإِحْدَى الْكُبَرِ (35)
إنها لإحدى الكبر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
کہ (یقیناً وه جہنم) بڑی چیزوں میں سے ایک ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
کہ وہ (آگ) ایک بہت بڑی (آفت) ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
بلاشبہ وہ (جہنم) یقینا بہت بڑی چیزوں میں سے ایک ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

36
نَذِيرًا لِلْبَشَرِ (36)
نذيرا للبشر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
بنی آدم کو ڈرانے والی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
(اور) بنی آدم کے لئے مؤجب خوف۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
بشر کے لیے ڈرانے والی ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

37
لِمَنْ شَاءَ مِنْكُمْ أَنْ يَتَقَدَّمَ أَوْ يَتَأَخَّرَ (37)
لمن شاء منكم أن يتقدم أو يتأخر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
(یعنی) اسے جو تم میں سے آگے بڑھنا چاہے یا پیچھے ہٹنا چاہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
جو تم میں سے آگے بڑھنا چاہے یا پیچھے رہنا چاہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اس کے لیے جو تم میں سے چاہے کہ آگے بڑھے، یا پیچھے ہٹے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

38
كُلُّ نَفْسٍ بِمَا كَسَبَتْ رَهِينَةٌ (38)
كل نفس بما كسبت رهينة۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
ہر شخص اپنے اعمال کے بدلے میں گروی ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
ہر شخص اپنے اعمال کے بدلے گرو ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
ہر شخص اس کے بدلے جو اس نے کمایا، گروی رکھا ہوا ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
تفسیر آیت نمبر 38,39,40,41,42,43,44,45,46

39
إِلَّا أَصْحَابَ الْيَمِينِ (39)
إلا أصحاب اليمين۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
مگر دائیں ہاتھ والے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
مگر داہنی طرف والے (نیک لوگ)۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
مگر دائیں طرف والے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

40
فِي جَنَّاتٍ يَتَسَاءَلُونَ (40)
في جنات يتساءلون۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
کہ وه بہشتوں میں (بیٹھے ہوئے) گناه گاروں سے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
(کہ) وہ باغہائے بہشت میں (ہوں گے اور) پوچھتے ہوں گے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
جنتوں میں سوال کریں گے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

41
عَنِ الْمُجْرِمِينَ (41)
عن المجرمين۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
سوال کرتے ہوں گے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
(یعنی آگ میں جلنے والے) گنہگاروں سے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
مجرموں سے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

42
مَا سَلَكَكُمْ فِي سَقَرَ (42)
ما سلككم في سقر۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
تمہیں دوزخ میں کس چیز نے ڈاﻻ۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
کہ تم دوزخ میں کیوں پڑے؟۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
تمھیں کس چیز نے سقر میں داخل کر دیا؟
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

43
قَالُوا لَمْ نَكُ مِنَ الْمُصَلِّينَ (43)
قالوا لم نك من المصلين۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
وه جواب دیں گے کہ ہم نمازی نہ تھے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
وہ جواب دیں گے کہ ہم نماز نہیں پڑھتے تھے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
وہ کہیں گے ہم نماز ادا کرنے والوں میں نہیں تھے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

44
وَلَمْ نَكُ نُطْعِمُ الْمِسْكِينَ (44)
ولم نك نطعم المسكين۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
نہ مسکینوں کو کھانا کھلاتے تھے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور نہ فقیروں کو کھانا کھلاتے تھے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور نہ ہم مسکین کو کھانا کھلاتے تھے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

45
وَكُنَّا نَخُوضُ مَعَ الْخَائِضِينَ (45)
وكنا نخوض مع الخائضين۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اور ہم بحﺚ کرنے والے (انکاریوں) کا ساتھ دے کر بحﺚ مباحثہ میں مشغول رہا کرتے تھے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور اہل باطل کے ساتھ مل کر (حق سے) انکار کرتے تھے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور ہم بے ہودہ بحث کرنے والوں کے ساتھ مل کر فضول بحث کیا کرتے تھے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

46
وَكُنَّا نُكَذِّبُ بِيَوْمِ الدِّينِ (46)
وكنا نكذب بيوم الدين۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
اور روز جزا کو جھٹلاتے تھے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
اور روز جزا کو جھٹلاتے تھے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
اور ہم جزا کے دن کو جھٹلایا کرتے تھے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

47
حَتَّى أَتَانَا الْيَقِينُ (47)
حتى أتانا اليقين۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
یہاں تک کہ ہمیں موت آگئی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
یہاں تک کہ ہمیں موت آگئی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
یہاں تک کہ ہمارے پاس یقین آگیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
تفسیر آیت نمبر 47,48,49,50,51,52,53,54,55,56

48
فَمَا تَنْفَعُهُمْ شَفَاعَةُ الشَّافِعِينَ (48)
فما تنفعهم شفاعة الشافعين۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
پس انہیں سفارش کرنے والوں کی سفارش نفع نہ دے گی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
(تو اس حال میں) سفارش کرنے والوں کی سفارش ان کے حق میں کچھ فائدہ نہ دے گی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
پس انھیں سفارش کرنے والوں کی سفارش نفع نہیں دے گی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

49
فَمَا لَهُمْ عَنِ التَّذْكِرَةِ مُعْرِضِينَ (49)
فما لهم عن التذكرة معرضين۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
انہیں کیا ہو گیا ہے؟ کہ نصیحت سے منھ موڑ رہے ہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
ان کو کیا ہوا ہے کہ نصیحت سے روگرداں ہو رہے ہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
تو انھیں کیا ہے کہ نصیحت سے منہ موڑنے والے ہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

50
كَأَنَّهُمْ حُمُرٌ مُسْتَنْفِرَةٌ (50)
كأنهم حمر مستنفرة۔
[اردو ترجمہ محمد جونا گڑھی]
گویا کہ وه بِدکے ہوئے گدھے ہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ فتح محمد جالندھری]
گویا گدھے ہیں کہ بدک جاتے ہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
[اردو ترجمہ عبدالسلام بن محمد]
جیسے وہ سخت بدکنے والے گدھے ہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تفسیر ابن کثیر
اس آیت کی تفسیر پچھلی آیت کے ساتھ کی گئی ہے۔

1    2    Next